Tag: zardari

ہم وہ لوگ نہیں جو معافی مانگ کر جدہ بھاگ جاتے ہیں،

1 September, 2015
1Sep15_DUa آصفDU

نواز شریف نوے کی دہائی کی سیاست دہرارہے ہیں

اسلام آباد : ڈاکٹر عاصم حسین کی گرفتاری کے بعد پیپلزپارٹی کے شریک چیرمین آصف علی زرداری کا پہلا سخت ردعمل سامنے آگیا، کہتے ہیں نواز شریف نوے کی دہائی کی سیاست دہرارہے ہیں۔

لندن سے جاری ایک بیان میں انہوں کہا کہ سب سے پہلے قاسم ضیا اور سینیٹر بنگش کے بیٹے کو گرفتار کیا گیا پھر رینجرز نے ڈاکٹر عاصم حسین کو حراست میں لیا، جس کے فوری بعد سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اور مخدوم امین فہیم کے وارنٹ گرفتاری بھی جاری ہوگئے۔آصف زرداری کا کہنا تھا کہ سندھ میں سیاستدانوں اور بیوروکریٹس کو ایف آئی اے اور نیب ہراساں کررہی ہیں، یہ سارے اقدامات سیاسی انتقام کی طرف اشارہ کررہے ہیں۔آصف زرداری نے کہا کہ اگر ایجنسیاں منصفانہ احتساب کرنا چاہتی ہے تو انہیں اس وفاقی وزیر کے خلاف سب سے پہلے کارروائی کرنی چاہئے جس کا مجسٹریٹ کے سامنے دیا گیا ایک اعترافی بیان موجود ہے کہ وہ شریف برادران کے لیے منی لانڈرنگ میں ملوث ہے۔ان کا کہنا تھا کہ وفاقی ایجنسیوں کی سندھ میں کارروائیاں آئین کی کھلی خلاف ورزی ہے، جبکہ پنجاب کے وزیر رانا مشہود میاں برادران کے لئے پیسے وصول کررہے تھے ویڈیو منظرعام پر آگئی لیکن اس وزیر کو گرفتار نہیں کیا گیا۔

آصف زرداری پر ہاتھ ڈالنا جنگ کی ابتداء ہوگی

27 August, 2015
سید خورشید شاہ
DU

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور پیپلز پارٹی کے رہنماء سید خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ اگر آصف علی زرداری پر ہاتھ ڈالا جاتا ہے تو یہ جنگ کی ابتداء کے سوا کچھ نہیں ہو گا۔
وفاقی دارالحکومت میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ آصف زرداری نے کبھی فوج کے خلاف بات نہیں کی، پارلیمنٹ کے اندر رہ کر جنگ لڑیں گے۔
تین(3) کروڑکی کرپشن: پی پی رہنما قاسم ضیاء گرفتار
پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین صدر آصف علی زاداری کے حوالے سے سید خورشید شاہ نے کہا کہ وہ ہر سال چھٹیوں پر بیرون ملک جاتے ہیں، ایک ہفتے میں وہ ملک واپس آ جائیں گے۔پیپلز پارٹی کے رہنماوں کی گرفتاری پر انہوں نے بتایا کہ پیپلز پارٹی کے لوگوں کی پکڑ دھکڑ بند کی جائے، ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری افسوسناک ہے، قاسم ضیاء کو ہتھکڑی لگانے پر نیب کو شرم آنی چاہیے۔
سابق وزیراعظم گیلانی اور امین فہیم کی گرفتاری کے احکامات
انہوں نے پارٹی کے دیگر رہنماؤں پر بھی مقدمات کو تشویشناک قرار دیا۔اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے سندھ میں نیشنل اکاؤنٹی بیلٹی بیورو (نیب) کی کارروائیوں پر شدید اعتراض کیا گیا۔خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ نیب جو کچھ سندھ میں کر رہا ہے وہ مناسب نہیں، کیا ساری کرپشن صرف سندھ میں ہی ہو رہی ہے، کیا باقی صوبوں میں کرپشن نہیں ہے۔
سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر عاصم 90 روز کیلئے رینجرز کے حوالے
انہوں نے الزام عائد کیا کہ جو بنگالیوں کے ساتھ کیا گیا وہ اب سندھیوں کے ساتھ ہو رہا ہے۔خورشید شاہ نے مشورہ دیا کہ بدعنوانی کے الزامات پر پارٹی سربراہوں سے براہ راست بات کی جائے۔انہوں نے کہا کہ سندھ اور بلوچستان میں بھارتی ایجنسی را پوری طرح متحرک ہے، فوج کون کون سے محاذوں پر دشمنوں کا مقابلہ کرے گی، سندھ میں پکنے والا لاوا صرف پیپلز پارٹی ہی روک سکتی ہے۔
فوج کو سیاستدانوں کیلئے رکاوٹیں پیدا نہیں کرنی چاہیے
نوازا شریف کو مشورہ دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کو باہر آنا چاہیے، وہ پیپلز پارٹی کو بتائیں کہ کون کون بدعنوان ہے، اور انہوں نے کیا کیا کرپشن کی ہے، پیپلز پارٹی نے وزیر اعظم کو پیشکش کی ہے کہ بیٹھ کر بات کی جائے تمام ادارے ان کے ماتحت ہیں۔خورشید شاہ نے نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم بتائیں ملک میں کیا ہو رہا ہے، موجودہ صورت حال میں وفاق کو نقصان نہیں پہنچانا چاہتے، انتقامی کارروائیوں کے باوجود پارلیمنٹ کو کمزور نہیں کریں گے۔قبل ازیں خورشید شاہ کی صدارت میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں ان کا کہنا تھا کہ کامسیٹس انسٹیٹیوٹ نے کسی سے منظوری لیے بغیر برطانیہ کی ایک یونیورسٹی سے الحاق کیا، برطانوی یونیورسٹی طلبہ سے ڈگری کے عوض 2ہزار پاؤنڈز وصول کر رہی ہے، کامسیٹس نے کسی سے منظوری لیے بغیر برطانیہ کی یونیورسٹی سے الحاق کیا، کامسیٹس یونیورسٹی کیس ایگزیکٹ سے بھی بڑا اسکینڈل معلوم ہوتا ہے۔