Category: Shev Sina

اردو شاعر منور رانا نے بھی سرکاری اعزاز واپس کر دیا

October 19, 2015
19Oct15_BBC منور رانا01BBC

بھارت کے معروف اردو شاعر منور رانا نے بھی بھارت کے موجودہ حالات پر ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے بطور احتجاج اپنا ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈ واپس کر دیا ہے۔
منور رانا سے قبل بھارت کے 40 سے زیادہ معروف ادیب اپنے ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈ واپس کر چکے ہیں۔اس بارے میں بی بی سی سے بات کرتے ہوئے منور رانا نے کہا کہ وہ یہ ایوارڈ موجودہ حالات کے خلاف بطور احتجاج واپس کر رہے ہیں۔کچھ دن پہلے ہی منور رانا نے فیس بک پر پوسٹ کیا تھا کہ ایوارڈ واپس کرنے سے حالات نہیں بدلیں گے اور ادیبوں کو اس کے خلاف اپنا قلم اٹھانا ہو گا۔لیکن اب ایوارڈ واپسی کے اپنے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے انھوں نے کہا: ’لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ یا تو منور رانا ڈر گئے ہیں یا بک چکے ہیں، اگر مجھے بكنا ہوتا تو میں 40 برس پہلے بک گیا ہوتا، اب کون میری قیمت لگائے گا۔ میرے لیے یہ ایوارڈ بوجھ بن گیا تھا۔ بس وہی بوجھ اتارا ہے۔‘
19Oct15_BBC منور رانا02
انھوں نے کہا: ’یہ حکومت کے خلاف احتجاج نہیں ہے، یہ تو پورے معاشرے کے خلاف احتجاج ہے، لیکن معاشرے کی دیکھ بھال تو حکومت ہی کرتی ہے۔ اگر سو آدمی یہ فیصلہ کریں کہ اس گھر میں گائے یا بھینس کا گوشت ہے یا اس نے لو جہاد کیا ہے، اس کا مطلب تو یہ ہوا کہ حکومت یا پھر پولیس کا کوئی کردار ہی نہیں رہ گیا۔یہ پوچھنے پر کہ کیا واقعی ملک میں حالات اتنے خراب ہوگئے ہیں کہ اتنی بڑی تعداد میں ادیب مخالفت پر اتر آئے ہیں؟ انھوں نے کہا: ’حالات ابھی اتنے خراب نہیں ہوئے لیکن تیزی سے انتہائی خراب ہونے کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ کینسر کا علاج پہلے سٹیج پر ہی ہو سکتا ہے۔ اس کے بعد نہیں۔رانا نے اپنا ادبی ایوارڈ ایک پرائیویٹ ٹی وی چینل اے بی پی نیوز چینل پر براہ راست نشر ہونے والے ایک پروگرام کے دوران واپس کیا۔انھوں نے کہا: ’میں یہ ایک لاکھ کا بلینک چیک حکومت کو دیتا ہوں، وہ چاہے تو اسے کسی اخلاق کو بھجوا دیں، کسی كلبرگي، پنسارے کو یا کسی اس مریض کو جو ہسپتال میں موت کا منتظر ہو۔انھوں نے کہا: ’میں نے شاید غلطی سے یہ ایوارڈ لے لیا تھا، میں وعدہ کرتا ہوں کہ اب زندگی میں کبھی کوئی سرکاری ایوارڈ قبول نہیں کروں گا۔‘
19Oct15_BBC منور رانا03
رانا نے کہا: ’لوگ گھما کر بحث کو نریندر مودی پر لے جاتے ہیں لیکن ملک کا ماحول خراب کرنے کے لیے مودی نہیں بلکہ ملک کے لوگ ذمہ دار ہیں۔ نفرت کے اس ماحول کو دور کرنے کی ذمہ داری تمام شہریوں پر ہے۔ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈز کو بطور احتجاج واپس کرنے کی ابتدا مصنف ادے پرکاش نے کی تھی۔ انھوں نے منور رانا کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔اس سے قبل بنارس کے مصنف کاشی ناتھ سنگھ نے اپنا اعزاز واپس کرنے کا اعلان کیا تھا۔ حال میں بھارت کے بہت سے مصنفین نے ملک میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری کے خلاف یا تو ایوارڈ واپس کیے ہیں یا اہم سرکاری اداروں سے ناطہ توڑ لیا ہے۔
Advertisements

گائے اسمگلنگ الزام: ایک اور ہندوستانی مسلمان قتل

October 17, 2015
17Oct15_DU گائے01
DU

نئی دہلی: ہندوستان کے شمالی ریاست کے ایک گاؤں میں مشتعل مظاہرین نے گائے کو ذبح کرنے کے لئے اسمگلنگ کئے جانے کے الزام میں ایک مسلمان کو ڈنڈو کے وار سے قتل اور دیگر 4 کو زخمی کردیا۔
خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ جانوروں پر ظلم کرنے کے الزام میں اس کے دیگر 4 زخمی ساتھوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔پولیس افسر نے بتایا ہے کہ پولیس ان دیہاتیوں کی تلاش کررہی ہے جو کہ ریاست ہماچل پردیش کے گاؤں ساراھان میں حملے کے ذمہ دار ہیں۔ مذکورہ ریاست نئی دہلی سے 260 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔پولیس افسر کا کہنا تھا کہ دیہاتیوں کے مشتعل ہجوم نے ایک ٹرک کا پیچھا کیا، جس میں 5 گائے اور 10 بیل موجود تھے، اور ٹرک میں موجود 5 افراد پر حملہ کردیا۔پولیس افسر کا کہنا تھا کہ یہ پانچوں افراد جنگل میں روپوش ہوگئے اور پولیس نے موقع پر پہنچ کر انھیں ہسپتال منتقل کیا جہاں ایک شخص ہلاک ہوگیا۔

اس کا کہنا ہے کہ پولیس نے دیگر بچ جانے والے 4 افراد کو جانوروں پر ظلم اور ان کو ٹرک میں سوار کرتے ہوئے زخمی کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے۔خیال رہے کہ گذشتہ ماہ اتر پردیش میں گائے کے گوشت کھانے کی افوائیوں پر ایک مسلمان کو قتل کردیا گیا تھا۔یاد رہے کہ انتہا پسند ہندوؤں کی جانب سے ملک بھر میں گائے کے ذبح کرنے پر پابندی کا مطالبہ کیا جارہا ہے جو کہ آئے روز ہندوستان میں مشتعل مظاہروں کا سبب بن رہا ہے۔ہندوستان میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے ہندو قوم پرست رہنما نیرندرا مودی کی حکومت کے قیام کے بعد سے ملک میں ہندو انتہا پسندی کی لہر میں اضافہ ہوگیا ہے۔

IS IT REALLY BEEF THAT INDIA EXPORTS? ہندوستان گائے کا گوشت بیچ کر 4.8 بلیوں ڈالر کماتا ہے

October 13, 2015
13Oct15_NH بیف
NewsHub

The beef export­s of India have touche­d $4.8 billio­n

Cow slaughtering is a huge issue in India these days. Narendra Modi’s BJP had made it a part of its election manifesto during the 2014 election campaign. Given this, one cannot help but wonder how India has gained the distinction of becoming the world’s biggest beef exporter when slaughtering cows is banned in 24 out of its 29 states. The answer is simple, but it lies in the details. According to the United States Department of Agriculture (USDA), India recently surpassed Brazil and Australia in becoming the world’s biggest beef exporter. India does export huge quantities of red meat, but it is not beef — it is buffalo meat. But it is still called beef because the USDA classifies buffalo meat as beef.
The beef exports of India have touched $4.8 billion. The Modi government is now pushing for a ban on cow slaughtering throughout the country. Despite its contentious nature, the appeal has become so alluring that the Congress party has now announced it will support the government if it proposes a bill to ban cow slaughter. Digvijaya Singh, the general secretary of Congress, went one step further and said that the BJP should know that cow slaughter is banned in 24 states, most of which was imposed by the Congress itself when it was in power.
The BJP has blamed Congress for what it sees as a rising trend of slaughtering cows in the country. It feels that because Congress encouraged buffalo meat exports when it was in power, cow slaughtering is now on the rise and the country is exporting beef, ie, cow meat in the guise of buffalo meat. Officially, the export of cow meat is banned in India. Minister of State for Agriculture, Sanjeev Balyan, a member of parliament from Muzzaffarnagar, Uttar Pradesh (UP), says that illegal cow slaughter is on the rise in UP and is creating communal problems. Balyan is the same man who was accused of fanning communal violence in Muzzaffarnagar in 2013.
The politics on cow slaughter, beef consumption and the talk about the rise in its exports is complex. You cannot separate one from the other, especially at a time when the right-wing BJP is leading the country.
The recent case of lynching in Dadri, UP, in which Mohammad Ikhlaq was brutally killed over alleged consumption of beef is not an isolated incident. The insecurity among minorities in India is on the rise. A series of incidents over the last two years show that India has reached a point where the stage is set for more communal violence.