Category: Murder

جنوبی افغانستان میں ھزارہ افراد بشمول خواتین کا اغواہ اور قتل

November 21, 201521Nov15_VOA ہزارہ01VOA

تقریباً چھ ماہ قبل غزنی سے اغوا کیے گئے سات شیعہ ہزارہ افراد جن میں خواتین بھی شامل تھیں، کی لاشیں رواں ماہ زابل سے برآمد ہوئی تھیں اور اس کے خلاف بڑے مظاہرے دیکھنے میں آئے تھے۔افغانستان کے جنوبی صوبہ زابل میں نامعلوم مسلح افراد نے شیعہ برادری سے تعلق رکھنے والے متعدد افراد کو اغوا کر لیا ہے اور یہ واقعہ ایسے وقت پیش آیا ہے جب رواں ماہ ہی زابل سے سات مغوی ہزارہ افراد کی لاشیں برآمد ہونے پر اس کے خلاف ملکی تاریخ کے بڑے احتجاجی مظاہرے دیکھنے میں آچکے ہیں۔حکام کے مطابق ہفتہ کو علی الصبح مسلح افراد نے کابل اور قندھار کے درمیان مرکزی شاہراہ مسافر بسوں کو روکا اور شناخت کے بعد ان میں سے ہزارہ برادری کے لوگوں کو زبردستی اپنے ساتھ لے گئے۔مغویوں کی اصل تعداد کے بارے میں متضاد بیانات سامنے آئے ہیں لیکن حکام کے بقول ان کی تعداد 14 سے 20 تک ہے۔
21Nov15_VOA ہزارہ02
تاحال اغوا کاروں کے بارے میں کچھ معلوم نہیں ہو سکا ہے اور نہ ہی کسی نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے لیکن جنوبی افغانستان میں طالبان اور داعش سے وابستہ شدت پسند شیعہ لوگوں کے اغوا میں ملوث رہے ہیں۔فارسی زبان بولنے والے اس شیعہ ہزارہ برادری کو طویل عرصے سے افغانستان میں ناروا سلوک اور ایذا رسانیوں کا سامنا رہا ہے جب کہ طالبان کے دور اقتدار میں اس برادری کے ہزاروں افراد کا قتل عام بھی ہو چکا ہے۔تقریباً چھ ماہ قبل غزنی سے اغوا کیے گئے سات شیعہ ہزارہ افراد جن میں خواتین بھی شامل تھیں، کی لاشیں رواں ماہ زابل سے برآمد ہوئی تھیں۔ہزاروں افراد نے اغوا اور قتل کے اس واقعے کے خلاف کابل سمیت ملک کے مختلف حصوں میں مظاہرے کیے اور حکومت سے ان لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا تھا
Advertisements

القاعدہ کا اہم کمانڈر ساتھیوں سمیت شام میں ہلاک

October 18, 2015
18Oct15_AA القاعدہ01al-Arabia

شام سے موصولہ اطلاعات کے مطابق القاعدہ کا ایک اہم کمانڈر دو ساتھی جنگجوؤں سمیت مارا گیا ہے، تاہم فوری طور پر یہ واضح نہیں ہو سکا کہ ہلاک ہونے والے سعودی شہری سنافی النصر [جن کا اصل نام عبدالمحسن عبداللہ ابراہیم تھا] امریکی قیادت میں سرگرم اتحادی فوج کا نشانہ بنا یا اسے روسی لڑاکا طیاروں سے اپنے انجام دے دوچار کیا۔انسانی حقوق کے مانیٹرنگ گروپ ‘آبزرویٹری’ کے بتایا کہ سنافی کی ہلاکت جمعرات کے روز شمالی شام کے علاقے دانا میں ہوئی جہاں وہ القاعدہ کی مقامی شاخ النصرہ فرنٹ سے تعلق رکھنے والے سعودی اور مراکشی جنگجوؤں کے ہمراہ موجود تھے۔

امریکی قیادت میں مغربی اتحاد گذشتہ ایک برس جبکہ روسی طیارے اسی سال 30 ستمبر سے النصرہ فرنٹ اور داعش کے خلاف فضائی حملوں میں مصروف ہیں۔

شامی آبزرویٹری کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان کے مطابق یہ بات واضح نہیں ہو سکی کہ سنافی کی موت روسی بمباری سے ہوئی یا وہ امریکی اتحادیوں کا نشانہ بنا، تاہم القاعدہ سے منسلک شام کی جنگ میں مصروف تنظیم النصرہ فرنٹ کے مطابق سنافی النصر کو دانا کے علاقے میں نشانہ بنایا گیا اور ان کی گاڑی پر 2 میزائل داغے گئے۔

شامی آبزرویٹری متعدد رضاکاروں کے توسط سے شام کے اندر سے معلومات جمع کرتی ہے۔ اس کا دعوی ہے کہ جمعرات کے حملوں میں القاعدہ ہی کا ایک مصری کمانڈر بال بال بچا۔ حملوں کا نشانہ بننے والے چاروں رہنماؤں کو القاعدہ کے کمانڈر ایمن الظواہری نے شام بھجوایا تھا۔

سنافی النصر ان 6 افراد میں شامل ہیں جن کے نام گزشتہ برس اقوام متحدہ نے پابندیوں کی فرست میں شامل کیے تھے۔ 30 سالہ عبد المحسن عبد اللہ ابراہیم الشارخ سعودی عرب کو مطلب 85 افراد کی فہرست میں شامل تھے. رپورٹس کے مطابق سنافی النصر کو مبینہ طور پر اسامہ بن لادن کا کزن بتایا جاتا ہے، وہ القاعدہ کی جنگی حمت عملی ترتیب دینے کے ماہر سمجھے جاتے تھے۔

شام میں مارے جانے والے بن لادن خاندان کے سنافی النصر کے 6 بھائی تھے جن میں سے زیادہ تر القاعدہ میں شامل ہو گئے تھے، ان کے 2 بھائی عبد الہادی عبد اللہ ابراہیم الشیخ اور عبد الرزاق عبد اللہ ابراہیم الشیخ امریکا حفاظتی مرکز گوانتا نامو بے میں بھی قید رہے تھے، جن کو 2007 میں سعودی عرب کی جیل منتقل کیا گیا تھا۔

سترہ (17)۔ روز میں 37 فلسطینی قتل

October 17, 2015
17Oct15_DU فلسطینی01DU

غزہ: فلسطین کے مغربی کنارے کے علاقے غزہ میں اسرائیلی فورسز نے فائرنگ کرکے مزید دو فلسطینیوں کو قتل اور 98 کو زخمی کردیا ہے۔
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق وزارت صحت کے ترجمان اشرف نے بتایا کہ غزہ کے شمالی حصے بیت الحنون کراسنگ کے قریب اسرائیلی فوج نے 22 سالہ فلسطینی نوجوان یحیٰ عبدالقادر فرحت کے سر میں گولی مار دی، جس سے وہ ہلاک ہوگیا۔دوسرے فلسطینی نوجوان 22 سالہ محمد حمادیہ کو سرحدی علاقے میں فائرنگ کرکے قتل کیا گیا۔وزارت صحت کے مطابق آنسو گیس اور فائرنگ کے باعث 98 فلسطینی زخمی بھی ہوئے ہیں۔رواں ماہ کے آغاز سے اب تک اسرائیلی فورسز کی فائرنگ سے 37 فلسطینی ہلاک ہوچکے ہیں۔جبکہ اسرائیلی فورسز سے جڑپوں میں سینکڑوں فلسطینی زخمی بھی ہوئے ہیں۔ادھر خبر رساں ادارے کے مطابق حالیہ کشیدگی میں اب تک 7 اسرائیلی فوجی ہلاک اور درجنوں زخمی بھی ہوئے ہیں۔خیال رہے کہ 1993-1987 اور 2005-2000 کے دوران ہونے والے انتفاضہ میں ہزاروں افراد ہلاک اور ہزاروں زخمی ہوگئے تھے۔

گائے اسمگلنگ الزام: ایک اور ہندوستانی مسلمان قتل

October 17, 2015
17Oct15_DU گائے01
DU

نئی دہلی: ہندوستان کے شمالی ریاست کے ایک گاؤں میں مشتعل مظاہرین نے گائے کو ذبح کرنے کے لئے اسمگلنگ کئے جانے کے الزام میں ایک مسلمان کو ڈنڈو کے وار سے قتل اور دیگر 4 کو زخمی کردیا۔
خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ جانوروں پر ظلم کرنے کے الزام میں اس کے دیگر 4 زخمی ساتھوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔پولیس افسر نے بتایا ہے کہ پولیس ان دیہاتیوں کی تلاش کررہی ہے جو کہ ریاست ہماچل پردیش کے گاؤں ساراھان میں حملے کے ذمہ دار ہیں۔ مذکورہ ریاست نئی دہلی سے 260 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔پولیس افسر کا کہنا تھا کہ دیہاتیوں کے مشتعل ہجوم نے ایک ٹرک کا پیچھا کیا، جس میں 5 گائے اور 10 بیل موجود تھے، اور ٹرک میں موجود 5 افراد پر حملہ کردیا۔پولیس افسر کا کہنا تھا کہ یہ پانچوں افراد جنگل میں روپوش ہوگئے اور پولیس نے موقع پر پہنچ کر انھیں ہسپتال منتقل کیا جہاں ایک شخص ہلاک ہوگیا۔

اس کا کہنا ہے کہ پولیس نے دیگر بچ جانے والے 4 افراد کو جانوروں پر ظلم اور ان کو ٹرک میں سوار کرتے ہوئے زخمی کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے۔خیال رہے کہ گذشتہ ماہ اتر پردیش میں گائے کے گوشت کھانے کی افوائیوں پر ایک مسلمان کو قتل کردیا گیا تھا۔یاد رہے کہ انتہا پسند ہندوؤں کی جانب سے ملک بھر میں گائے کے ذبح کرنے پر پابندی کا مطالبہ کیا جارہا ہے جو کہ آئے روز ہندوستان میں مشتعل مظاہروں کا سبب بن رہا ہے۔ہندوستان میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے ہندو قوم پرست رہنما نیرندرا مودی کی حکومت کے قیام کے بعد سے ملک میں ہندو انتہا پسندی کی لہر میں اضافہ ہوگیا ہے۔

شقی القلب بھارتی نے بیوی کے کٹے سر کے ساتھ مارچ کیا

October 12, 2015
12Oct15_AA کٹاسرal-Arabia

جنونی شخص کو دیکھ کر راہگیر منظر نامہ کو فلم شوٹنگ سمجھے
بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے شہر پونا میں پولیس نے اپنی بیوی کے کٹے ہوئے سر کو لے کر شہر کی سڑکوں پر گھومنے والے جنونی شخص کو گرفتار کرلیا۔Video

بھارتی میڈیا کے مطابق مہاراشٹرا کے شہر پونا میں 60 سالہ شخص رامو چون ایک ہاتھ میں اپنی بیوی کے کٹے ہوئے سر اور دوسرے میں کلہاڑی کو لے کر نہایت اطمینان اور بے خوفی کے ساتھ گھوم پھر رہا تھا جس کو دیکھ کر راہ گیر خوفزدہ ہوگئے اور پولیس کو اطلاع کر دی اور پولیس نے کچھ دیر بعد اس شخص کو بیوی کے کٹے ہوئے سر سمیت گرفتار کر لیا۔

ابتدائی تحقیقات کے مطابق رامو چون ایک ہاؤسنگ سوسائٹی میں چوکیدار ہے اور اس نے اپنی بیوی کو ناجائز تعلقات کے شبے میں کلہاڑیوں کے وار سے قتل کیا پھر اس کا سر کاٹ کر گھر سے باہر آ گیا اور انتہائی دیدہ دلیری سے بھرے بازار میں گھومتا پھرتا رہا۔ پولیس نے رامو کی بہو کی مدعیت میں اس کے خلاف قتل کی دفعہ کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے۔

ِ

داعش نے چار افراد کو بلندو بالا عمارتوں سے گراکر قتل کر ڈالا

October 09, 2015
09Oct15_AA داعش 01al-Arabia

شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ عراق وشام داعش کے جنگجوئوں نے الگ الگ واقعات میں چار افراد کو ہم جنس پرستی کے الزام میں بلند عمارتوں کی چھتوں سے گرا کرموت کے گھاٹ اتار دیا۔
09Oct15_AA داعش 02
العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پچھلے اتوار کو عراق کے موصل شہر میں “باب الطوب” کے مقام پر ایک شخص کوچھت سے گرانے سے قبل مقامی آبادی کو وہاں جمع کیا گیا۔ بعد ازاں ایک شخص کی آنکھوں پر پٹی باندھ کر اسے کثیرالمنزلہ عمارت کی چھت پر لایا گیا جہاں سے اسے نیچے پھینک دیا گیا۔
09Oct15_AA داعش 03
عراق کے نینویٰ شہر میں بھی دو افراد کو بلند وبالا عمارتوں کی چھتوں سے گرا کر قتل کیا گیا۔سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹویٹر پر ایک داعشی جنگجو کی تصویر پوسٹ کی گئی ہے جس میں اسے ہم جنس پرستی کے الزام میں پکڑے گئے افراد دی گئی سزائوں پر عمل درآمد کرتے دکھایا گیا ہے۔
09Oct15_AA داعش 04

پارٹی کارکن اکبر حسین متحدہ ارکان اسمبلی رضا حیدر کا قاتل نکلا

October 03, 2015
03Oct15_DU قاتل01DU

کراچی: رینجرز نے کراچی کے علاقے گلشن معمار میں کارروائی کے دوران متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے اراکین اسمبلی کے قتل میں ملوث ٹارگٹ کلر کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے.
03Oct15_DU قاتل02
سندھ رینجرز کے ترجمان کی جانب سے جاری کیے گئے اعلامیے کے مطابق کراچی کے علاقے گلشن معمار میں کارروائی کے دوران اکبر حسین عرف کالا اور کونین حیدر رضوی کو گرفتار کیا گیا، جن کا تعلق متحدہ قومی موومنٹ سے ہی ہے۔اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ اکبر حسین عرف کالا نامی ٹارگٹ کلر ایم کیو ایم کے اراکین سندھ اسمبلی رضا حیدر اور ساجد قریشی کے قتل سمیت ٹارگٹ کلنگ کی 10 وارداتوں میں بھی ملوث ہے.یاد رہے کہ ایم کیو ایم کے رکن اسمبلی رضا حیدر کو کراچی کے علاقے ناظم آباد میں 2 اگست 2010 کو اُس وقت سر میں گولی مار کر قتل کیا گیا تھا جب وہ نماز کے لیے وضو کر رہے تھے۔
03Oct15_DU قاتل03
بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق رضا حیدر کو قتل کرنے والے ملزمان ایک موٹر سائیکل اور سفید کار میں سوار تھے جبکہ حملہ آوروں نے فائرنگ سے قبل اللہ اکبر کا نعرہ لگایا تھا جس کے باعث پولیس کو شبہ تھا واقعہ میں کالعدم لشکر جھنگوی نامی تنظیم ملوث ہو سکتی ہے۔رضا حیدر کے قتل کے بعد کراچی میں 3 روز تک ہنگامے ہوتے رہے جس میں 50 کے قریب افراد مارے گئے تھے۔رضا حیدر کے قتل کے وقت ایم کیو ایم سندھ میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی حکومت کی اتحادی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: متحدہ کے رکن اسمبلی ساجد قریشی قتل
ایم کیو ایم کے رکن سندھ اسمبلی ساجد قریشی کو ان کے 25 سالہ بیٹے کے ہمراہ گزشتہ عام انتخابات میں ایم پی اے منتخب ہونے کے ایک ماہ بعد 21 جون 2013 کو نارتھ ناظم آباد میں اُس وقت قتل کیا گیا تھا جب وہ جمعہ کی نماز پڑھ کر مسجد سے باہر آئے تھے جبکہ ان کے قتل کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی تھی۔2013 میں اُس وقت ایم کیو ایم نے سندھ میں اپنے کارکنان میں ریفرنڈم کروایا تھا کہ وہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی صوبائی حکومت میں شامل ہو یا نہ ہو البتہ آج تک اس ریفرنڈم کے نتائج کا اعلان نہیں کیا گیا۔ساجد قریشی کے قتل کے ایک ماہ بعد ہی پولیس کے کرائم انویسٹی گیشن (سی آئی ڈی) ڈپارٹمنٹ کی حراست میں کالعدم تنظیم کے ایک مبینہ کارکن کی ہلاکت ہوئی تھی، جس کے حوالے سے سی آئی ڈی کا دعویٰ تھا کہ ملزم ایم کیو ایم کے رکن اسمبلی کے قتل میں ملوث تھا.
03Oct15_DU قاتل04
ساجد قریشی کی ہلاکت کے بعد متحدہ قومی موومنٹ نے کراچی سمیت سندھ بھر میں بھرپور ہڑتال کی تھی جس میں کاروبار مکمل طور پر بند رہا تھا۔ملزم کی 2013 کے عام انتخابات سے قبل کراچی کے حالات خراب کرنے میں ملوث ہونے کے حوالے سے رینجرز ترجمان کا کہنا تھا کہ اکبر حسین انتخابات کے دوران متحدہ قومی موومنٹ کے ہی انتخابی کیمپوں پر عزیز آباد، ناظم آباد، مکا چوک اور یوسف پلازہ میں دستی بم حملوں میں ملوث تھا۔خیال رہے کہ 2013 کے عام انتخابات سے قبل ایم کیو ایم کے 8 انتخابی کیمپوں پر بم حملے ہوئے تھے جن میں متحدہ کے کئی کارکن ہلاک اور زخمی ہوئے تھے، ان حملوں کی ذمہ داری بھی طالبان کی جانب سے قبول کی جاتی رہی جبکہ ایم کیو ایم کا کہنا تھا کہ سیکیولر نظریات کی وجہ سے ان کو دہشت گردی کے ذریعے آزادانہ انتخابی مہم چلانے نہیں دی گئی۔رینجرز نے اپنے اعلامیے میں دعویٰ کیا ہے کہ ایم کیو ایم کے کارکن اکبر حسین عرف کالا نے متحدہ قومی موومنٹ کی اعلیٰ قیادت کی ہدایت پر تمام جرائم کیے، جن کا مقصد عوام کی ہمدردی حاصل کرنا تھا۔دوسرے ملزم کے حوالے سے رینجرز نے بتایا ہے کہ کونین حیدر رضا رضوی ٹارگٹ کلنگ کی 7 وارداتوں کے ساتھ ساتھ بھتہ خوری اور ہڑتالوں کے دوران جلاؤ گھیراو میں بھی ملوث ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ 5 سالوں میں ایم کیو ایم کے 6 ارکان اسمبلی پر قاتلانہ حملے ہوئے ہیں جن میں سے 4 کی ہلاکت ہوئی.متحدہ قومی موومنٹ کے رکن اسمبلی رضا حیدر کو 2010 میں قتل کیا گیا، جنوری 2013 میں منظر امام کورنگی میں قتل ہوئے جن کے قاتل کو 10 روز قبل ہی رینجرز نے گرفتار کیا ہے قاتل کا تعلق بھی ایم کیو ایم سے ہے، جون 2013 میں ساجد قریشی کو نشانہ بنایا گیا، ایک سال بعد جون 2014 میں ایم کیو ایم کی خاتون رکن قومی اسمبلی طاہرہ آصف کو لاہور میں مبینہ ڈکیتی میں مزاحمت پر فائرنگ کرکے قتل کیا گیا، دو ماہ قبل 18 اگست 2015 کو ایم کیو ایم کے رکن قومی اسمبلی اور سینئر رہنما رشید گوڈیل پر کراچی میں قاتلانہ حملہ کیا گیا تھا جس میں وہ شدید زخمی ہو گئے تھے جبکہ 15 روز پہلے ہی 18 ستمبر کو ایم کیو ایم کے رکن سندھ اسمبلی سیف الدین خالد کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی، تاہم سیف الدین اس حملے میں محفوظ رہے۔