ہندوستان میں گیتا کا خاندان مل گیا

October 15, 2015
15Oct15_DU گیتا01DU

کراچی: قوت گویائی اور سماعت سے محروم ہندوستانی لڑکی گیتا نے تصاویر کے ذریعے ہندوستان میں موجود اپنے رشتے داروں کو شناخت کرلیا.
ایدھی ٹرسٹ کے ترجمان انور کاظمی نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ گیتا نے ہندوستانی سفارت خانے کی جانب سے بھیجی گئی تصاویر کی مدد سے اپنے رشتے داروں کو شناخت کیا، جس کی تصدیق نئی دہلی حکام کی جانب سے بھی کردی گئی.
04Aug15_VOA گیتا
این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق گیتا نے ہندوستانی ہائی کمیشن کی جانب سے بھیجی گئی ایک تصویر میں اپنے والد، سوتیلی والدہ اور بہن بھائیوں کو شناخت کیا.ہندوستانی وزیر خارجہ شسما سوراج نے بھی اس حوالے سے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ گیتا بہت جلد ہندوستان میں ہوگی، ہم نے اس کے خاندان کا سراغ لگا لیا ہے، جسے ڈی این اے ٹیسٹ کے بعد اس کے خاندان کے حوالے کردیا جائے گا۔
06Aug15_BBC گیتا0115Oct15_DU گیتا02
ہندوستانی لڑکی 12 سال قبل ہندوستان سے ٹرین کے ذریعے پاکستان میں داخل ہوئی تھی.میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان رینجرز نے 2003 میں سرحد عبور کر کے لاہور پہنچنے والی ایک 11 سالہ لڑکی کو تحویل میں لیا تھا جس کے بعد اسے ایدھی فاؤنڈیشن کے حوالے کر دیا گیا، جہاں بلقیس ایدھی نے اسے گیتا کا نام دیا۔

مزید پڑھیں:فاطمہ گیتا کیسے بنی؟
اس حوالے سے بلقیس ایدھی کا کہنا تھا کہ گیتا کسی سے بات نہیں کرسکتی، ابتداء میں اسے ایک ویلفئیر ہاؤس سے دوسرے ویلفیئر ہاؤس منتقل کیا جاتا رہا ہے جس کے باعث وہ اکثر بھاگنے کی کوشش کرتی تھی۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ ’حکام کی جانب سے لڑکی کے خاندان والوں کی تلاش کا کام کیا گیا تھا تاہم اس کے نتائج حاصل نہیں ہوسکے اور آخر کار گیتا کو کراچی منتقل کردیا گیا۔‘اس معاملے پر گہری نظر رکھنے والے پاکستان میں انسانی حقوق کے سرگرم کارکن انصار برنی گیتا کی تصاویر لے کر اکتوبر 2012 میں ہندوستان گئے تھے تاہم اس وقت کوئی مثبت پیش رفت نہیں ہو سکی تھی.تاہم سلمان خان کی فلم “بجرنگی بھائی جان” کی دونوں ممالک میں کامیابی کے بعد گیتا کے معاملے نے ایک بار پھر سر اٹھایا.رواں سال عید الفطر پر ریلیز ہونے والی بولی وڈ فلم میں سلمان خان قوت گویائی سے محروم ایک پاکستانی بچی کو اس کے والدین تک پہنچانے کی ذمہ داری اٹھاتے ہیں.انصار برنی کا دعویٰ تھا کہ “بجرنگی بھائی جان” ان کی جانب سے 2012ء میں گیتا کے خاندان کی تلاش میں ہندوستانی کے کیے جانے والے دورے سے متاثر ہو کر بنائی گئی ہے۔
Geeta_12
بعد ازاں ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج نے پاکستان میں ہندوستانی سفیر ڈاکٹر ٹی سی اے راگھوان کو گذشتہ 12 سال سے پاکستان میں مقیم بولنے اور سننے کی صلاحیت سے محروم ہندوستانی لڑکی سے ملنے کی ہدایت کی تھی.گیتا فی الوقت کراچی کے ایدھی سینٹر میں رہائش پذیر ہیں اور اس وقت ان کی عمر 22 سے 24 سال کے درمیان ہے.میڈیا رپورٹس کے مطابق، صرف سبزیاں کھانے والی گیتا نے ایدھی فاؤنڈیشن میں اپنے کمرے میں ایک چھوٹا مندر بھی بنا رکھا ہے.
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s