ایان علی کی ‘بریت’ کیلئے درخواست دائر

October 15, 2015
15Oct15_DU ایان01DU

راولپنڈی: کرنسی اسمگلنگ کیس میں ماڈل ایان علی پر آج بھی فرد جرم عائد نہیں کی جاسکی جبکہ ان کے وکیل نے بریت کیلئے درخواست دائر کر دی ہے.
عدالت نے ماڈل کی بریت کی درخواست پر سماعت 28 اکتوبر تک ملتوی کردی۔ڈان نیوز کے مطابق کرنسی اسمگلنگ کیس کی سماعت کے لیے ماڈل ایان علی کسٹم عدالت میں پیش ہوئیں۔سماعت کے دوران ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں اپنی موکلہ کی بریت کی درخواست دائر کرتے ہوئے کہا کہ ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں جو کچھ لکھا ہے وہ کسٹم حکام کے لیے لمحہ فکریہ ہے جبکہ ہائی کورٹ نے ایان علی کے خلاف کسٹمز کے تمام الزامات کو رد کردیا ہے۔سماعت کے دوران کسٹم عدالت نے جج رانا آفتاب احمد نے کہا کہ آج بھی اگر تاریخ دے دی تو میڈیا پر آئے گا کہ جج صاحب تاریخ پر تاریخ دیتے ہیں۔لطیف کھوسہ نے وقفہ سماعت کے بعد درخواست کے حوالے سے اپنا موقف جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ایان علی کو 4 ماہ تک غیر قانونی طور پر حراست میں رکھا گیا جس دوران ان پر کسی طرح کا جرم ثابت نہیں ہوسکا۔

پچھلا حوالہ: ماڈل ایان علی کرنسی اسمگلنگ کےالزام میں گرفتار
لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ ان کی موکلہ پر فرد جرم کسی ثبوت کے بغیر نہیں عائد کیا جاسکتی لہٰذا ایان علی کو آرٹیکل 265 اے کے تحت بری کیا جائے۔اس موقع پر کسٹمز کے وکیل فیروز جنجوعہ نے کہا کہ کیس کے فیصلے میں پہلے ہی بہت تاخیر ہوچکی ہے اس لیے بریت کی درخواست پر آج ہی بحث کی جائے۔سماعت کے دوران راولپنڈی ڈسٹرکٹ بار کے صدر کی جانب سے ایان علی کے گارڈز کے وکلاء جیسے لباس پہن کر عدالت آنے پر اعتراض اٹھاتے ہوئے درخواست کی گئی جس پر عدالت نے ماڈل کے گارڈز کو آئندہ سماعت پر دیگر رنگوں کے لباس پہن کر آنے کی ہدایت کی۔ عدالت نے ایان علی کی بریت کی درخواست پر سماعت 28 اکتوبر تک ملتوی کردی۔
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s