صنعا (یمن) پر حوثیوں کا قبضہ ہے۔ صنعاء کو واگذار کرانے کے فیصلہ کن معرکے کا جلد آغاز

27 August, 2015
27Aug2015_AA صنعا
al-Arabia

یمنی فوج کے سپہ سالار کا ایرانیوں سمیت غیرملکیوں کی گرفتاری کا دعویٰ

Video

یمن کی مسلح افواج کے سربراہ میجر جنرل محمد علی المقدشی نے کہا ہے کہ دارالحکومت صنعاء کو حوثی باغیوں سے چھڑانے کے لیے فیصلہ کن معرکہ چند ایام کے اندر شروع ہونے والا ہے۔ وہ وقت اب قریب آ گیا ہے جب پورا ملک باغیوں کے چنگل سے آزاد ہو گا اور یمن کا چپہ چپہ آئینی حکومت کے کنٹرول میں ہو گا۔سعودی عرب کے “الریاض” اخبار کو دیے گئے ایک انٹرویو میں جنرل المقدشی کا کہنا تھا کہ آئینی حکومت کی وفادار فوج اور اتحادی ملیشیا جلد ہی صنعاء میں داخل ہونے والی ہیں۔ صنعاء کو باغیوں سے چھڑانے کا فیصلہ کن معرکہ شروع ہونے کو ہے۔ جلد ہی ہم پورے یمن کو باغیوں سے چھڑالیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں یمنی فوج کے سربراہ کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے فضائی حملوں کےہوتے ہوئے ہمیں بری فوج کو اتارنے کی ضرورت نہیں ہے۔ یمن کی اپنی فوج ہی باغیوں کے لیے کافی ہے۔ اتحادی ممالک کا فضائی آپریشن ہی کافی ہے۔

جنرل احمد المقدشی نے انکشاف کیا ہے کہ یمن میں باغیوں کے خلاف لڑائی کے دوران ایران، شام ، عراق اور لبنان کے باشندوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔ یہ لوگ باغیوں کی صفوں میں شامل ہوکر آئینی حکومت کے خلاف لڑ رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ آئینی حکومت کی بحالی کے ساتھ ہی فوج کو مضبوط ادارہ بنانے، پڑوسی ملکوں کے تعاون سے فوج کی پیشہ وارانہ بنیادوں پر عسکری تربیت، تیاری اور اسلحہ فراہم کرنے پر توجہ دی جائے گی۔ یمن کی مسلح افواج میں 20 ہزار تربیت یافتہ غیر فوجی جنگجو بھی باغیوں کے خلاف نبرد آزما ہیں جو ہرطرح کے فوجی آپریشن میں فوج کی مدد کرتے ہیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s